مستحصلہ کنز الاسرار

بسم اللہ الرحمٰن الرحیم

مستحصلہ کنز الاسرار

علمِ جفر کے یہ تمام مضامین جنابِ محترم سید امیر حیدر کاظمی صاحب کی محنتوں اور کاوشوں کا نتیجہ ہیں بلکہ میرے لئے تحفہ بھی ہیں کہ جنکی اشاعت یہاں لازمی بنانا مقصود ہے تا کہ اہلِ علم کی بات کو علم کے متلاشی حضرات تک پہنچایا جا سکے۔ کہ میں نے بھی دن و رات کی تلاش کے بعد ہی ایسے اساتذہ تک رسائی حاصل کر کے علوم سیکھے ہیں۔ بس اتنا یاد رہے کہ علم اس ہی کو ملتا ہے جو علوم کے تقاضوں کو پورا کر سکے ۔ جنابِ محترم امیر حیدر کاظمی صاحب تحریر فرماتے ہیں کہ:۔

علم جفر آئمہ معصومین علیہ السلام کا پاکیزہ علم ہے۔ یہ علم اپنے باطن کے اعتبار سے روحانی و وجدانی کیفیت کا حامل ہے۔ اس علم کو سمجھنے کے لئے کشف و کرامات والی نگاہوں کا ہونا بھی ضروری ہے۔ تاریخ کی کتب میں ہے کہ مولا امام جعفر صادقؑ نے اہنے اصحاب کو اس علم سے فیضیاب فرمایا تھا۔ مولا امام جعفر صادق ؑ فرماتے ہیں ” ہمارے پاس علم مستقبل و علم مکتوب ہے جو دلوں میں بیٹھ جاتا ہے۔ لوگوں کے کانوں پر دستک دیتا ہے۔ ہمارے پاس جفر احمر اور جفر ابیض اور مصحب فاطمہ ؑ اور جفر جامع ہے جس میں ہر وہ چیز ہے جس کی لوگوں کو ضرورت ہے۔ (بخار الانوار جلد 8 ص 28)

قارئین کرام ! آج آپ کی خدمت میں ایک مجرب ترین قاعدہ پیش کیا جاتا ہے جس کے جوابات انتہائی صحیح اور عمیق وسعت علم پر مبنی ہوتے ہیں۔

اصول قاعدہ
۔ مکمل یکسوئی سے واضح سوال لکھیں۔
۔ اب اس سوال کو بسط حرفی کر کے ابجد قمری سے اعداد معلوم کریں۔
۔ اب سطر بسط حرفی میں تعداد حروف اور تعداد نقاط معلوم کریں۔ اور ان دونوں کے میزان کو سوال کی قیمت میں جمع کریں ۔ یہ جمل کبیر ہوگا۔ اس جمل کبیر سے حروف بنا لیں۔ اور ملفوظی کریں۔ یہ سطر اساس ہوگی۔
۔ سطر اساس کو نظیرہ ابجد قمری دیں۔
۔ سطر نظیرہ کو مؤخر صدر کریں۔
۔ سطر مؤخر صدر کے ہر حرف کو اعداد جدول بدوح یلن سے دیں۔
۔ اب ہر حرف کے نیچے عدد قانون 3 لکھیں۔ مگر ق ش ث ذ ظ کے نیچے نہ لکھیں۔
۔ اس کے بعد ربعات لکھیں جس کا طریقہ یہ ہے کہ پہلے چار اعداد کے نیچے چار مرتبہ (1111) لکھیں۔ اس کے بعد (2222) لکھیں۔ اس کے بعد (3333) لکھیں۔ اسی طرح یہ شطر مکمل کریں۔
۔ اب سطر زائد العشر لکھیں جس کا طریقہ یہ ہے کہ بائیں سے دائیں ایک تا نو اعداد لکھیں۔ خانہ دہم کو چھوڑ کر پھر 1 تا 9 لکھیں۔
10۔ اب اعداد تکرار جنس لکھیں یعنی حرف مساوات اگر ایک بار سطر مین تکرار کرے تو 0 لکھیں اگر دوسری بار یہی حرف آئے تو اس کے نیچے 1 لکھیں۔ اگر تیسری بار آئے تو 2 لکھیں۔ اگر چوتھی بار آئے تو 3  ہذا القیاس۔
۔ اب ان سطور کے اعداد کو جمع کریں۔ (عدد بدوح +عدد قانون+عدد ربع+ عدد عشر+عدد تکرار)۔

اور اس کا میزان ہرخانے کے نیجے لکھتے جائیں۔ اس میزان کے اکائی عدد سے بذریعہ  ایقغ بالترتیب جواب ناطق کریں۔ نہایت ہی عمدہ ، واضح جواب بر آمد ہوگا۔ انشاء اللہ۔

یا علیم :۔ فطین جاوید بن (—–) کو کیا مرض لاحق ہے؟ 15 مارچ 2016

اعداد سوال:۔ 3393 تعداد نقاط 30 تعداد حروف 56 میزان 3479

حروف:۔  ط  ع  ت  ج  غ

یاعلیم:۔ کیا علی حیدر بن ( – – – ) کو علم آگاہی حاصل ہوگا؟ 5 نومبر 2018
جمل کبیر:۔ 2865 تعداد نقاط 24 تعداد حروف 61 میزان 2950

حروف:۔ ن   ظ   ب   غ

(واللہ اعلم بحقائق الامور)